سفر یادگار ایک کا بھوپال

ندوی دریابادی الصدیق عمیر

Maarif - - اكتوبر معارف -

حاصل تو حیثیت کی دل کو بھوپال میں جسم جغرافی کے ہندوستان معروف کی بھوپال ہے۔ بھی وسط بلد شہر یہ طرح کی وسط امت ہے، ہی پہاڑوں، سرسبز نہیں، قدیم بہت طرح کی ریاستوں یا خطوں اور تاریخ اس خطہ یہ ہوئے سمائے میں دامن اپنے کو جھرنوں اور جھیلوں وادیوں، افغانی ایک پہلے سوسال ڈھائی جب ہوگیا زار ولالہ زار گل واقعی وقت زمین یہ سے وجود کے ساتھیوں کے ان اور خاں محمد دوست مند حوصلہ ظاہر میں رنگوں الگ الگ نعمتیں تو برسا کرم ابر کا اسلام ہوئی۔ آشنا جن کو والوں بھوپال کرے۔ کون شمار و حساب رنگونکا ان اب ہوئیں۔ تعلق کا جن ہیں خانوادے دو وه نمایاں سے سب میں ان ہے ناز پر نعمتوں ہے۔سے دہلویؒلله ولیشاهحضرتاورثانیؒالفمجددحضرتراست براه کا معارف و علمکے صاحبؒمجدد حضرت صرف مجددیہ خانقاهکی بھوپال اسی غالباً ہے۔ بھی موطن و مولد کا امجاد اولاد کی ان بلکہ نہیں مرکز ایکنےاسلامیادب مجلس شاعلاقائیکی اسلامیادب رابطہ سےنسبت و تعلیمات کی ان اور ثانی الف مجدد حضرت اہتمام کا مذاکره مجلس سید مولانا خانہ کتب کے المساجد تاج دارالعلوم سے عنوان کے خدمات محمد ڈاکٹر داروں، ذمہ فعال کے اسلامی ادب مجلس کیا۔ میں ندوی سلیمان کو ان کہ نصیبی خوش کی وغیره ندوی جنید عارف ڈاکٹر اور خاں حسان کی مجددیہ خانقاه سجاده صاحب مجددی میاں سعید شاه حضرت سرپرستی میاں سعید حضرت لیکن تھا مختصر و محدود گرچہ مذاکره یہ ہے۔ حاصل دین رہا، نمایاں خاصا اثر و نفع کا اس سے موجودگی مبارک کی مجددی کی عمل کے کرنے مسخ کو دین اور مخالفت کی مداخلت میں حنیف سرہندی احمد شیخ نے جس ہے اصلاح و تجدید کار خاص وه یقینا مزاحمت اصلاح اور روافض رد میں تجدید کار اس کیا۔ فائز پر مجددیت مقام کو کو فتنوں کے دور موجوده رہی۔ حاصل اہمیت بڑی بھی کو تصوف مجدد شیخ کو امت لیے کے استیصال بلکہ ابطال و رد کے ان اور سمجھنے

Newspapers in Urdu

Newspapers from India

© PressReader. All rights reserved.