تلخیص و ترجمہ

امام ابن تیمیہؒ کی بحث اقسام’’ القرآن‘‘

Maarif - - ء٢٠١٨ فروری معارف -

اصلاحی الرحمٰن فضل مولوی

تیمیہؒ ابن عبدالسلام ابن عبدالحلیم بن احمد ابوالعباس الدین تقی امام

میں جلدوں ٣٧ کل یہ ہیں، بھی فتاوی کے ان میں کتابوں قدر گراں کی قاسم محمد بن عبدالرحمٰن شیخ مرتب ہیں، گئے کیے پیش میں شکل مرتب کی القرآن‘‘ اقسام’’ میں جلد تیرہویں نے راقم ہیں۔ الحنبلی النجدی العاصیمی

ہے۔ جاتی کی پیش تلخیص ایک کی جس کیا، مطالعہ کا فصل پیش میں شکل کی امور مختلف کو قسموں ان نے تیمیہ ابن علامہ

ان پھر یا کھائی قسم کی صفات کی مقدسہ ذات اپنی نے تعالیٰ مثلاً کیا، سے صفات و ذات کی اس جو کیا اظہار میں قسم کا نشانیوں الشان عظیم کا نشانیوں عظیم کی اس جو لیا نام بھی کا مخلوقات ان پھر یا ہیں وابستہ

ہیں۔ مظہر ہیں، سے لحاظ کے خبریہ جملہ قسمیں یہ نزدیک کے صاحب امام السماء فوربک کہ آیت یہ مثلاً ہے پر طور کے حصہ غالب شکل یہ کی قسم

لحق۔ انہ والارض لنسئلنہم فوربک ، جیسے ہیں پر طور کے طلبیہ جملہ قسمیں بعض کھائی قسم پر جس سے قسم اس کہ ہے اور بات یہ یعملون کانوا عما اجمعین جملہ یہ سے لحاظ اس ہے مراد ثبوت کا اس علیہ مقسم یعنی ہے جارہی ہوتی مراد بھی قسم محض سے اس کبھی کبھی ہے۔ جاسکتا کہا بھی خبریہ لیے اس ہے، جاتا ٹھہرایا مراد بھی کو ثبوت و تحقیق کی علیہ مقسم اور ہے ہو ظاہر عمدگی کی اس میں جس ہو سے باتوں ان یہ کہ ہے ضروری ہیں۔ امور والے کرنے پیش کو ثبوت کے باتوں خفیہ اور غائب کئی جیسے و شمس جیسے ظاہر، بالکل ہیں، چیزیں کی سامنے تو امور بعض جاتی کھائی قسم تو ذریعہ کے ان میں ان ارض، و سماء نہار، و لیل قمر، اسکالر دارالمصنّفین، شبلی اکیڈمی، اعظم گڑھ۔ islahi re i mail com

Newspapers in Urdu

Newspapers from India

© PressReader. All rights reserved.