اخبار علمیہ

Maarif - - ۳�٦ ء۲۰۱۸ مئی معارف ۵/۲۰۱ - اصلاحی صک،

قرآن’’ پاک کا ثوبی نسخہ‘‘

سے مدد کی دھاگہ سوئی نے اختر نسیم والی رہنے کی آباد احمد

میں ء۱۹۸۷ ہے۔ کیا تیار نسخہ خوبصورت ایک کا پاک قرانٓ میں سال ۳۲ سفید گز ؍۳۰۰ میں اس کیا۔ شروع کام طلب دقت اور صبرآزما یہ نے انہوں کا پڻی پیپر گز ؍۲۵ اور دھاگے کے رنگ گلابی اور سیاه کپڑا، کا رنگ تین میں جلد ہر کی جس ہے مشتمل پر جلدوں دس یہ ہے۔ گیا کیا استعمال ہے۔ انچ ؍۱۵ چوڑائی اور انچ ؍۲۲ لمبائی کی جلد ہر ہیں۔ سپارے تین کی اور کسی میں اس نے خاتون کہ رہے واضح ہے۔کلو ۵۵ وزن مجموعی ؍۳۰ انقلاب،( کیا۔ مکمل اسے ہوئے رہتے باوضو اور کی نہیں حاصل مدد

(۱۴ ص ء،۲۰۱۸ مارچ

بک’’ شیلف کی شکل کی لائبریری‘‘

کیا تعمیر خانہ کتب ایسا ایک میں ابک کار صوبہ شمالی کے ترکی

یہ سے لحاظ کے تعمیر فن ہے۔ جیسی شیلف بک شکل کی جس ہے، گیا لائبریری یہ نامی ( Kamil Gulec) گولک کامل ہے۔ منفرد اور شاہکار مطبوعہ کتابیں ہزار ؍۶۰ میں اس ہے۔ گئی کی قائم میں یونیورسڻی کارابک کتابیں لیے کے طلبہ ہیں۔ موجود میں شکل ڈیجیڻل زائد سے لاکھ ؍۶۰ اور کتب دیگر کے ملک اور ہے نظم کا کرنے جاری لیے کے عرصہ کچھ کہ ہے یہ طریقہ کا اس ہے۔ بھی سہولت کی منگوانے کتابیں سے خانوں کے ملک انتظامیہ دے۔ اطلاع کو انتظامیہ لیے کے کتاب مطلوبہ علم طالب کتابوں اندر کے دن تین محض کرکے رابطہ سے خانوں کتب دوسو تقریبا اب سے قیام کے اس ہے۔ رہتی کھلی وقت ہمہ لائبریری ہے۔ کراتی فراہم کو کے رپورٹ ہیں۔ کرچکے استفاده سے اس افراد ہزار ؍۵۰ لاکھ ؍۴ تک تعلق سے کتابوں میں اخٓر کے مارچ سال ہر سے ء۱۹۶۴ میں ترکی مطابق ہے۔ قائم روایت کی منانے ہفتہ قومی کا خانوں کتب طورپر کے محبت و

ہے) جاسکتی دیکھی تفصیل پر ۹ ص ء،۲۰۱۸ مارچ ؍۳۱ انقلاب،(

عالمی’’ یوم نور‘‘

یونیسکو نے اپنے حالیہ انتالیسویں اجتماع میں ؍۱۶ مئی کی تاریخ

مقصد کا اس ہے۔ کیا فیصلہ کا منانے طورپر کے نور‘‘ یوم عالمی’’ کو پر ترقی پائیدار اور سائنس ثقافت، مثلا حیات ہائے شعبہ مختلف کو لوگوں دراصل یہ ہے۔ کرانا آگاه سے فوائد کے ڻیکنالوجی نور بر مبنی اور نور منائے پر طور کے نور) سال عالمی( لائٹ آف ایئر انڻرنیشنل میں ء۲۰۱۵ جس ہے۔ کڑی ایک کی اس اور تکمیل کی اعلان کے یونیسکو والے جانے میں یونیسکو لیاتھا۔ حصہ نے افراد ملین سو ایک کے ممالک ۱۴۰ میں روسی اور لینڈ نیوزی میکسیکو، گھانا، لیے کے انعقاد کے نور یوم عالمی اور عاملہ مجلس کی یونیسکو تائید کی جس تھی، کی پیش تجویز نے اتحاد اداره ذیلی کے یونیسکو داری ذمہ کی اس تھی۔ کی نے ممالک رکن ۲۷ طور مجموعی کو جس ہے، رکھی سنبھال نے پروگرام سائنس بنیادی علمی شامل ادارے حکومتی عالمی مختلف میں جس ہے، چلاتی کمیڻی ایک پر لوگوں عام اور نوجوانوں طلبہ، پر سطح عالمی تحت کے پروگرام اس ہیں۔ ممالک رکن لیے کے کرانے واقف سے کردار اور فوائد منافع، کے نور کو اس کو مئی ؍۱۶ گے۔ جائیں کیے منعقد پروگرام میں ء۲۰۱۸ مئی میں میں جس ہوگا، منعقد میں پیرس شہر کے فرانس پروگرام ایک کا سلسلہ نئی سائنس، اردو ماہنامہ( گے۔ ہوں شریک نمایندے کے ملکوں مختلف

ء)۲۰۱۸ اپریل ،۵۵ ص دہلی،

نطفہ’’ کو خلا میں چھوڑ کر رد عمل جاننے کا عزم‘‘

عجیب کیسی کیسی جانے نہ تک اب ادارے تحقیقاتی خلائی مختلف ارضی کشش اشیا تمام یہ مگر ہیں، چکے بھیج میں خلا چیزیں غریب و امریکی کہ ہے خبر ہوگئیں۔ گم میں وسعتوں لامحدود کی خلا کر نکل سے کا چھوڑنے میں خلا تولید هٴماد انسانی نے ناسا اداره تحقیقاتی خلائی کے نطفہ انسانی میں گریویڻی مائیکرو کہ ہے بنایا سے مقصد اس منصوبہ کہ سکے چل پتہ یہ اور ہوسکے ہموار راه کی ہونے واقف سے عمل رد تجربہ نامی ۱۱ مائیکرو نہیں۔ یا ہے ممکن میں خلا افزائش کی انسانی نسل چھوڑ میں خلا نمونے منجمد کے نطفوں میں جس ہے، کارنامہ نیا کا ناسا میڈیکل کینساس آف یونیورسڻی پیچھے کے تجربہ اس گے۔ جائیں دیے کے گریویڻی مائیکرو پر تولید هٴماد کہ ہے کہنا کا ان ہے۔ دماغ کا سینڻر کی کمی اسی تجربہ یہ ہیں۔ محدود نہایت معلومات انسانی متعلق سے اثرات اس بعد کے واپسی سے خلا کہ ہیں چاہتے جاننا یہ وه ہے۔ کوشش کی تلافی اور بیل قبل سے س ا گے؟ پائیں ره زنده وه کیا اور ہوگی کیسی ماہیت کی

ظاہر سے تجربات گئے کیے متعلق سے اسپرم کے جانوروں ممالیہ دیگر کے بعد کے اس تاہم تھا متحرک اسپرم تو میں گریویڻی مائیکرو کہ ہے ہوتا جوزف وابستہ سے تحقیق اس تھا۔ فعال غیر اور سست انتہائی وه میں عمل دور بھی سے خلا ہم جبکہ’’ ہے درج میں رپورٹ بھی بیان اہم یہ کا تاش متعلق کے ہونے آباد اور جانے پر فلکی اجرام دیگر اور مریخ چاند، وہاں ہم کیا کہ ہے آتا سوال یہ پر طور فطری میں ذہن توہمارے ہیں سوچتے تفصیل( ۔ہے‘‘ درکار ضرور کاجواب اس ہمیں گے۔ پائیں بڑھا نسل اپنی فرمائیں) ملاحظہ پر ۶ ص ء،۲۰۱۸ اپریل ؍۱۹ دہلی، نئی دعوت، روزه سہ

صحرائے’’ صحارا کی وسعت پر نئی تحقیق‘‘

کیلو مربع لاکھ ۳۶ اور گرم سے سب کا دنیا صحارا صحرائے چاڈ، الجیریا، میں افریقہ براعظم ہے۔ صحرا بڑا سے سب مشتمل پر میڻر علاقوں وسیع کے اورتونس سوڈان نائیجریا، ماریطانیہ، مالی، لیبیا، مصر، لینڈ میری کی امریکہ ہے۔ کررہا اختیار وسعت مزید صحرا یہ مشتمل پر صدی گذشتہ مطابق کے تحقیق کی دانوں سائنس منسلک سے یونیورسڻی نے انہوں تحقیق دوران ہے۔ گیا بڑھ فیصد دس رقبہ کا اس دوران کے سے بارشوں والی ہونے میں افریقہ درمیان کے ء۲۰۱۳ ےس ء۱۹۲۰ میں علاقوں سرحدی متصل سے اس کہ چلا پتہ تو کیا تجزیہ کا ڈیڻا متعلق سو ایک سالانہ میں علاقوں جن گئی، چلی گھڻتی بتدریج اوسط کی بارش ہے۔ ہوتا میں صحرا شمار کا اس ہے، ہوتی بارش کم سے انچ) ؍۴( میڻر ملی نیچے سے حد اس تناسب کا بارش میں خطوں بیشتر کے صحارا اطراف وسعت کی صحارا ہوگیا۔ شامل میں صحارا علاقہ تمام یہ اور ہے گیا چلا دوران کے سالوں ۹۳ گیا، دیکھا میں گرما موسم اضافہ زیاده سے سب میں رہا۔ بڑھتا سے شرح کی فیصد ۱۶ رقبہ کا صحرا میں موسم کے گرمیوں اور انسانی والی دینے جنم کو تغیرات موسمی سبب کا اس نے محققین وارمنگ گلوبل کہ کہا مزید نے انہوں ہے۔ دیا قرار کو سرگرمیوں قدرتی کے وںٴصحرا دیگر سبب کے تبدیلی موسمی والی ہونے میں نتیجہ کے ہے، ناک تشویش حال صورت یہ گے۔ ہوں ہورہے وسیع یقینا بھی رقبے انسانی اور حیاتیاتی پر ارض هٴکر پھر تو رہا جاری طرح اسی سلسلہ یہ اگر پر ۸ ص ، انقلاب کے ء۲۰۱۸ اپریل ؍۱۸ تفصیل( گی۔ ہوجائے مشکل بقا

فرمائیں) ملاحظہ

Newspapers in Urdu

Newspapers from India

© PressReader. All rights reserved.